مرکز ابلاغ

امارات پوسٹ گروپ کے فرسٹ پوسٹل زون کے وفد کا ابو ظہبی میں واحہ الکرامہ شہداء میموریل کا دورہ
17 MAY 2017

امارات پوسٹ گروپ کے فرسٹ پوسٹل زون کے وفد کا ابو ظہبی میں واحہ الکرامہ شہداء میموریل کا دورہ

امارات پوسٹ گروپ نے اپنی عوامی پی او باکس سروس کو مزید اپ گریڈ کردیا ہے جس کے بعد عارضی طور پر دبئی آنے لوگ اور یہاں کے مستقل رہائشی یو اے ای میں موجود کسی بھی ڈاک خانے کے ذریعے اپنی ڈاک وصول کرنے کے لیے ایک مشترکہ پی او باکس استعمال کرسکیں گے۔

لوگوں کو عوامی پی او باکس سروس استعمال کرنے کی ترغیب دینے کا قدم ای کامرس کے میدان میں بھرپور حصہ لینے کی ای پی جی کے حکمت عملی کے تحت اٹھایا گیا ہے جس کی وجہ آنے والے وقتوں میں ای کامرس میں دکھائی دینے والی متوقع تیزی ہے۔

یو اے ای میں موجود ہر ڈاک خانے کے پاس ایک منفرد عوامی پی او باکس نمبر ہوتا ہے جو کہ کسی بھی ڈاک خانے سے یا امارات پوسٹ گروپ کی ویب سائٹ پر دیے گئے لنک https://www.epg.gov.ae/portal/_en/locations.xhtml پر کلک کرکے حاصل کیا جاسکتا ہے۔ اس سروس کے حصول کے لیے کسی بھی طرح کی رجسٹریشن درکار نہیں۔ لوگ اپنے موبائل نمبر کے ساتھ یہ پی او باکس نمبر خطوط اور پارسل بھیجنے والوں کو دے سکتے ہیں جس میں ای کامرس کمپنیاں بھی شمل ہیں۔

"امارات پوسٹ گروپ عوامی پی او باکس سروس میں نئے فیچرز کے اضافے پر بہت خوش ہے کیونکہ ہم سمجھتے ہیں کہ مصنوعات کی آن لائن خریداری کرنے والوں کے لیے ایک کم لاگت ڈیلیوری آپشن ہونے کی وجہ سے یہ ای کامرس کے میدان میں ایک قابل قدر اضافہ ثابت ہوگا۔" ان خیالات کا اظہار امارات پوسٹ گروپ کے قائم مقام چیف کمرشل آفیسر جناب عبید محمد القطامی نے کیا۔ انھوں نے کہا:" چونکہ ہمارے پاس پورے یو اے ای میں پھیلے ڈاک خانوں کا ایک وسیع نیٹ ورک موجود ہے لہذا ہم ان لوگوں کی ضرورتوں کو بھی باآسانی پورا کرسکتے ہیں جن کے پاس اپنے ذاتی پی او باکسز نہیں ہیں۔"

عوامی پی او باکس سروس کا ہدف وہ لوگ ہیں جن کے پاس اپنا پی او باکس نہیں ہے۔ مثال کے طور پر زیارتی ویزا رکھنے والے، کام کرنے والے مقامی لوگ جن کی پرائیوسی کی کوئی وجہ ہو، ملاح اور دیگر غیر مقامی لوگ جو یواے ای میں ایک مراسلاتی پتہ رکھنا چاہتے ہوں۔

عوامی پوسٹ باکس سروس لوگوں کو اس بات کی اجازت دیتی ہے کہ وہ ان پی او باکس نمبرز کو آن لائن مصنوعات فراہم کرنے والوں کو دیں یا اپنے رشتہ داروں اور دوستوں کو دیں۔ جب بھی کسی شخص کی کوئی ڈاک آنا متوقع ہو تو اسے چاہیے کہ وہ اس مخصوص ڈاک خانے کے رجسٹرڈ میل کاؤنٹر پر جائے اور وہاں موجود اسٹاف کو اپنا نام اور آئی ڈی فراہم کرے۔ پھر وہ لاگو شدہ فیس کی ادائیگی کے بعد اپنی ڈاک وصول کرسکتا ہے جو کہ عوامی مفاد کی خاطر نہایت کم رکھی گئی ہے۔ سروس کی فیس آنے والی ڈاک کی قسم اور وزن پر منحصر ہوتی ہے اور جو آنے والی ڈاک کی ہر ڈیلیوری پر اد اکی جاتی ہے۔


شارك برأيك
صوت العميل
لائیو چیٹ