مرکز ابلاغ

صومالی پوسٹ اور ای پی جی، صومالیہ اور یو اے ای کے مابین مراسلاتی خدمات کی ترقی کے امور کا جائزہ لیتے ہیں۔
05 NOV 2015

صومالی پوسٹ اور ای پی جی، صومالیہ اور یو اے ای کے مابین مراسلاتی خدمات کی ترقی کے امور کا جائزہ لیتے ہیں۔

حال ہی میں صومالی وزارتِ اطلاعات، مراسلات اور ٹیلی مواصلات کے ایک وفد نے امارات پوسٹ گروپ کا دورہ کیا اور فریقین کی جانب سے کچھ عرصہ قبل دستخط کی جانے والی ایک مفاہمتی یادداشت پر ہونے والی پیش رفت کا جائزہ لیا۔

انہوں نے اس اعتماد کا اظہار کیا کہ امارات پوسٹ گروپ، ملک میں کئی سالوں کی کشیدگی کے بعد شروع ہونے والے مراسلاتی نظام (پوسٹل نیٹ ورک) کی تعمیر نو میں صومالیہ کی ڈاک کی دو طرفہ ترسیل کو پُرسہولت بنانے میں کلیدی کردار ادا کر سکتا ہے۔

منسٹر (وزیر) کا یہ دورہ صومالی وزارتِ اطلاعات، مراسلات اور ٹیلی مواصلات اور امارات پوسٹ گروپ کے درمیان اپریل 2013 میں طے پانے والی باہمی مفاہمتی یادداشت کا پیرویانہ دورہ تھا۔ اس مفاہمتی یاداشت میں فریقین نے دبئی کو ڈاک کی چھانٹ کے مرکز کی حیثیت قرار دیتے ہوئے باہمی شراکت کے ذریعے صومالیہ کی ڈاک کی دو طرفہ ترسیل میں مدد پر اتفاق کیا۔

عزت مآب جولید کاسی نے ای پی جی کے عہدیداران سے گفتگو کرتے ہوئے انہیں صومالیہ میں کئی سالہ کشیدگی کے بعد بہتر ہوتی ہوئی سماجی و معاشی صورتحال سے آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ ملک کے غیر استعمال شدہ مراسلاتی ڈھانچے کی بحالی کے سلسلے میں ابھی کافی کام ہونا باقی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پارسل سروس کی بحالی ایک ترجیحی عمل تھا۔ انہوں نے بتایا کہ وزارت کا نیا منشور ڈاک کو کاروبار کی طرز پر استوار کرنا ہے۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ ای پی جی صومالیہ میں مراسلاتی سرگرمیوں کو معمول پر لانے میں مدد دینے میں مزید مؤثر کردار ادا کرے گا۔

عبداللہ الشرم نے صومالی وزیر کو امارات پوسٹ کے صومالیہ کے مراسلاتی نظام کو معمول پر لانے میں مدد دینے کے بھرپور عزم کا یقین دلایا اورصومالیہ اور یو اے ای کے درمیان ڈاک کی دو طرفہ ترسیل کو رواں رکھنے میں مکمل تعاون کی پیشکش کی۔

فریقین نے مفاہمتی یاداشت کے نفاذ کی پیروی کے لیے قائم کردہ منتظم کمیٹی کے ذریعے مفاہمتی یاداشت کے نفاذ کے اقدامات کو آگے بڑھانے پر اتفاق کیا۔


شارك برأيك
صوت العميل
لائیو چیٹ